السبت 19 صفر 1443 هـ
آخر تحديث منذ 1 ساعة 8 دقيقة
×
تغيير اللغة
القائمة
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو Hausa
السبت 19 صفر 1443 هـ آخر تحديث منذ 1 ساعة 8 دقيقة

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته.

الأعضاء الكرام ! اكتمل اليوم نصاب استقبال الفتاوى.

وغدا إن شاء الله تعالى في تمام السادسة صباحا يتم استقبال الفتاوى الجديدة.

ويمكنكم البحث في قسم الفتوى عما تريد الجواب عنه أو الاتصال المباشر

على الشيخ أ.د خالد المصلح على هذا الرقم 00966505147004

من الساعة العاشرة صباحا إلى الواحدة ظهرا 

بارك الله فيكم

إدارة موقع أ.د خالد المصلح

×

لقد تم إرسال السؤال بنجاح. يمكنك مراجعة البريد الوارد خلال 24 ساعة او البريد المزعج؛ رقم الفتوى

×

عفواً يمكنك فقط إرسال طلب فتوى واحد في اليوم.

کار ایکسیڈنٹ میں اس کی بیوی مرگئی تو اس صور ت میں اس پر کیا کفارہ ہے؟

مشاركة هذه الفقرة

کار ایکسیڈنٹ میں اس کی بیوی مرگئی تو اس صور ت میں اس پر کیا کفارہ ہے؟

تاريخ النشر : 23 شعبان 1438 هـ - الموافق 20 مايو 2017 م | المشاهدات : 1137

یہاں ایک شخص کی بیوی کار ایکسڈنٹ میں مرگئی ، واقعہ کچھ اس طرح ہے کہ وہ آدمی کار چلا رہا تھا اور اس کی بیوی بھی اس کے ساتھ موجود تھی ، کار چلاتے چلاتے اچانک راستے میں ایک اونٹ سامنے آیا جس کی وجہ سے ایکسڈنٹ ہوا اور اس میں اس کی بیوی چل بسی ، اس میں بعض لوگوں نے اس کو یہ فتوی دیا کہ وہ دو ماہ لگاتار روزے رکھے ، اسلئے کہ وہ خود اس کے قتل کا سبب بنا ہے ، کیا یہ درست ہے ؟

ماتت زوجته في حادث سيارة كان يقودها زوجها فهل عليه شيء؟

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

 بتوفیقِ الٰہی آپ کے سوال کا جواب پیشِ خدمت ہے:

اگر ڈرائیور نے کار چلاتے وقت سپیڈ اور گاڑی کے سلامتی کے اعتبار سے روڈ کے قوانین سے تجاوز نہیں کیا اور اس کے بعد اگر اس کے سامنے اچانک اونٹ آیا اور سواریوں کی حفاظت کرتے ہوئے اس سے ایکسڈنٹ ہوگیا ہے تو پھر اہل علم کے صحیح اور راجح قول کے مطابق اس پر کوئی گناہ نہیں ہے اور نہ ہی اس پرکوئی دیت اور کفارہ ہے

التعليقات (0)

×

هل ترغب فعلا بحذف المواد التي تمت زيارتها ؟؟

نعم؛ حذف