فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

حج و عمرہ / جمرہ ٔ عقبہ کی رمی کرنا حلال ہونے کے لئے شرط ہے ؟ کیا

جمرہ ٔ عقبہ کی رمی کرنا حلال ہونے کے لئے شرط ہے ؟ کیا

تاریخ شائع کریں : 2016-09-05 | مناظر : 1668
- Aa +

جو لوگ احرام سے حلال ہونے کے لئے جمرہ ٔ عقبہ کی رمی کا کہتے ہیں کیا ان کے نزدیک جمرہ ٔ عقبہ کی رمی کرنا حلال ہونے کے لئے شرط ہے ؟ مطلب یہ کہ اگر کوئی شخص طواف کرے اور پھر حلق کروالے اور رمی نہ کرے تو ان کے نزدیک اس کا کیا حکم ہے ؟

هل رمي جمرة العقبة شرط للتحلل

احرام سے پہلی دفعہ اس وقت تک حلال نہیں ہوسکتا جب تک وہ جمرۂ عقبہ کی رمی نہ کرلے اور اگر جمرہ ٔ عقبہ کی رمی سے پہلے اس نے حلق کروالیا تو اس پر فدیہ آئے گا کیونکہ اس نے حلق کروایا اس چیز(جمرۂ رقبہ کی رمی سے پہلے) جو حلال ہونے کے لئے ضروری تھی ، اور اسی طرح اس پر فدیہ لازم آئے گا اگر اس نے طواف ِ اِفاضہ کو رمی سے پہلے کرلیا ، مگر حلق والی صورت میں وہ رمی کے بعد حلق دوبارہ کروائے گا ، اور طواف والی صورت میں طواف کا اِعادہ نہیں کرے گا ۔ اور یہ سب اس صورت میں ہے کہ جب ان امور کے واقع ہو نے میں کوئی لاعلمی یا بھول یا غلطی نہ ہو ، اور اگر ان میں سے (لاعلمی یا بھول وغیرہ سے )کوئی ایک صورت بھی پائی گئی تو اس پر دم نہیں ہے ۔

اس مسئلہ کی وضاحت اور تفصیل کے لئے ملاحظہ کریں ــ’’حاشیۃالخرشی علی مختصر خلیل ۳۳۷/۲ اور علامہ ابن عبدالبر کی تمہید اور اس کے بعد ۲۷۳/۷

خالد المصلح

16/ 12/ 1424هـ

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں