فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

حج و عمرہ / عمرہ کے دوران نقاب پہننا

عمرہ کے دوران نقاب پہننا

تاریخ شائع کریں : 2016-09-10 | مناظر : 1649
- Aa +

میری بیوی نے رمضان میں عمرہ ادا کیا اور سعی کے دوران اپنے چہرے پر نقاب ڈال لیا ، اس کا شرعاَ کا کیا حکم ہے ؟

لبس النقاب أثناء العمرة

 امابعد۔

عورت حالتِ احرام میں اپنے چہرے کو نقاب سے چھپا نہیں سکتی جیسا کہ حضرت ابن عمر ؓ روایت نقل کرتے ہیں کہ حضوراکرمنے ارشاد فرمایا: ’’ عورت احرام کی حالت میں نہ تو نقاب کرے اور نہ ہی دستانیں پہنے‘‘ (رواہ البخاری ۱۸۳۸) ان کے علاوہ مغنی میں فرماتے ہیں : کہ اس میں اختلاف نہیں ہے، البتہ اگر مردوں کے قریب سے گزرنے کی وجہ سے عورت چہرے کو چھپانا چاہے تو وہ اپنے سر سے کپڑا چہرے پر گرا دے (جسے اِسدال کہتے ہیں ) اس میں بھی کوئی اختلاف نہیں اگر آپ کی بیوی نے سعی کے دوران کپڑے سے چہرے کو جہالت یا بھولے سے چھپا لیا ہو تو اس پرشرعاََ کوئی مواخذہ نہیں ہے ، یہی اہلِ علم کا قولِ صحیح ہے اور یہی شافعیہ اور حنابلہ کا قول ہے۔ واللہ أعلم بالصواب۔

خالد المصلح

27/ 11/  1424هـ

متعلقہ موضوعات

آپ چاہیں گے

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں