فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

طھارت / وضومیں تسمیہ تخلیل اور تکرار کے متعلق سوالات

وضومیں تسمیہ تخلیل اور تکرار کے متعلق سوالات

تاریخ شائع کریں : 2016-11-22 | مناظر : 1360
- Aa +

اگرمیں وضو کے ابتداء میں بسم اللہ پڑھنابھول جاؤ تو کیا میں وضو کے درمیان پڑھ سکتا ہوں اور جو انگلیوں کے تخلیل سے متعلق ہے تو ا س سے ہاتھوں کی انگلیاں مراد ہے یا پیروں کی ۔ اور کیا رسول اللہ ﷺ سے وارد ہے کہ انہوں نے وضو کو ایک مرتبہ کیا ہے یا دو مرتبہ کیا ہے ۔ یا آپﷺ نے ہمیشہ تین مرتبہ عضو کو دھویا ہے ہر وضو میں

أسئلة حول التسمية والتخليل والتكرار في الوضوء

امابعد۔۔۔

اللہ کی توفیق سے ہم آہپکے سوال کے جواب میں کہتے ہیں کہ:

پہلے سوال کا جواب: اگر آپ وضو کی ابتداء میں بسملہ کو بھول جاؤ تو وضو کے درمیان مشروع نہیں ہے کیونکہ اس کا محل وضو کی ابتداء ہے ۔

دوسرے سوال کا جواب: ہاتھوں اور پیروں دونوں کا تخلیل کرنا سنت ہے ۔

تیسر ے سوال کا جواب: حدیث میں وار دہے کہ آپنے ایک مرتبہ بھی وضو کیا ہے ، دو مرتبہ بھی اور تین مرتبہ بھی۔ اور بعض اعضاء کو دو مرتبہ دھویا ہے اور بعض اعضاء کو تین تین مرتبہ دھویا ہے ایک ہی وضو میں ۔

آپ کا بھائی

خالد بن عبد الله المصلح

18/12/1424هـ

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں