فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

التفسير / سونے کے پانی سےقرآنی کتابت کا حکم

سونے کے پانی سےقرآنی کتابت کا حکم

تاریخ شائع کریں : 2016-11-23 | مناظر : 1707
- Aa +

محترم جناب السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ! میرے پاس سونے کے پانی سے لکھی گئی ایک آیت ہے تو اس کاحکم بتادیجئے !

حكم كتابة القرآن بالذهب

حامداََ ومصلیاََ

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

امابعد

سونے کے پانی سے کتابت قرآن کے بارے میں چار اقوال ہیں:

پہلاقول:  جواز کا ہے اور حنفیہ کا اختیار کردہ ہے اور شافعیہ کی ایک جماعت بھی اسی کی قائل ہے ۔

 دوسرا قول:  حرمت کا ہے اور اس قول کو بعض مالکیہ ، شافعیہ اور حنابلہ نے اختیار کیاہے۔

تیسرا قول:  کراہت کاہے اور فقہاء کی ایک جماعت اس کی قائل ہے اور حنابلہ کا بھی مشہورمذہب یہی ہے ۔

چوتھاقول:  یہ ہے کہ آدمی اورعورت کے مصحف میں فرق ہے تو علماء ایک جماعت اس بات کی قائل ہے کہ عورتوں اور بچوں کے لئے یہ جائزہے اور آدمیوں کے لئے حرام ہے ۔

اور جو مجھے معلو م ہو رہی ہے وہ یہ کہ ایک آیت کے بارے میں بھی یہی اختلاف ہے جومصحف کے بارے میں ہے اور أقرب و أرجح قول یہی ہے کہ یہ مکروہ ہوگا کیو نکہ اس میں ایک تو اسراف پایا جارہا ہے دوسرا یہ کہ اس کی تعظیم جو تلاوت و عمل کے ذریعے مقصود ہے اس کی بجائے ظاہری صورت کی تعظیم لازمی آرہی ہے ۔

آپ کا بھائی

أ. د.خالد المصلح

1/ 3/ 1428هـ

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں