فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

متفرق فتاوى جات / اگر انسان گھر میں داخل ہو اور کوئی موجود نہ ہو تو کیا وہ خود کو سلام کرے گا؟

اگر انسان گھر میں داخل ہو اور کوئی موجود نہ ہو تو کیا وہ خود کو سلام کرے گا؟

تاریخ شائع کریں : 2017-02-15 | مناظر : 1228
- Aa +

محترم جناب ! السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔۔۔ اگر انسان گھر میں داخل ہو اور کوئی موجود نہ ہو تو کیا اس کے لئے ضروری ہے کہ خود کو سلام کرے؟

هل يسلم الإنسان على نفسه إذا دخل بيتًا ليس فيه أحد؟

حامداََ و مصلیاََ۔۔۔

وعليكم السلام ورحمة الله وبركاته

اما بعد۔۔۔

سلف کی ایک جماعت سے مروی ہے کہ اگر کوئی شخص گھر میں داخل ہو جہاں کوئی موجود نہ ہو تو اس کو چاہئے یہ کلمات کہے: ’’السلام علینا و علی عباداللہ الصالحین‘‘۔ کیونکہ اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے: ’’اگر تم گھروں میں داخل ہو تو اپنے آپ کو سلام کرو، یہ تحیہ ہے اللہ کی طرف سے جو مبارک بھی ہے پاکیزہ بھی‘‘۔(النور:۶۱)۔ اور یہ قول ابن عمرؓ، ابن عباسؓ، مجاھدؒ، عطاءؒ، اور امام زھریؒ سے مروی ہے۔

اور اہلِ علم کی ایک جماعت کا کہنا ہے کہ اس آیت کا مطلب یہ ہے کہ تم میں سے بعض ، بعض کو سلام کریں یعنی ایک دوسرے کو سلام کرو۔ اور اگر اس معنی پر محمول کیا جائے تو اس میں سلام کی مشروعیت پر دلیل نہیں جب انسان خالی گھر میں داخل ہو۔ کیونکہ وہاں کوئی موجود نہیں جس کو سلام کیا جائے۔ جیسا کہ مالکی فقہاء میں سے ابوبکر بن عربی نے ذکر کیا ہے، اور یہی زیادہ بہتر ہے۔ واللہ اعلم

آپ کا بھائی

أ.د.خالد المصلح

29 /11 /1428هـ

متعلقہ موضوعات

آپ چاہیں گے

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں