فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

متفرق فتاوى جات / چاندی کی چین پہننا

چاندی کی چین پہننا

تاریخ شائع کریں : 2017-03-02 | مناظر : 2388
FA
- Aa +

کیا چاندی کی چین یا بریسلٹ وغیرہ پہننا شرعا حرام ہے؟

لبس السلاسل الفضة

حامداََ و مصلیاََ۔۔۔

اما بعد۔۔۔

اللہ کیتوفیق سے ہم آپ کے سوال کے جواب میں کہتے ہیں کہ

مرد کیلئے جائز نہیں کہ انگوٹھی کے علاوہ چاندی کا کوئی زیور وغیرہ پہنے اور جمہور علماء جن میں حنفیہ، مالکیہ، شافعیہ اور حنابلہ کا قول ہے، کیونکہ رخصت صرف انگوٹھی کے بارے میں وارد ہوئی ہے۔ اہل علم کی ایک جماعت جن میں ظاہریہ بھی ہیں کہتے ہیں کہ آدمی کیلئے چاندی کا زیور انگوٹھی کے علاوہ پہننا جائز ہے جب کہ تشبہ بالنساء نہ ہو کیونکہ حرمت کیلئے لفظ عام وارد نہیں ہوا ۔ فتاوی مصریہ الکبری میں شیخ الاسلام ابن تیمیہؒ فرماتے ہیں (۳۲۵/۵): ’’ چاندی کا پہننا اگر اس میں تحریم کیلئے کوئی عام لفظ وارد نہیں ہوا تو کسی کیلئے جائز نہیں کہ وہ کچھ حرام کر دے الا یہ کہ اس بارے میں کوئی دلیل شرعی آ جائے‘‘۔

اور جو آپ نے سؤال کیا ہے چاندی کی چین وغیرہ کے بارے میں تو میری رائے کے مطابق دونوں  اقوال میں اس کا پہننا جائز نہیں اور یہ اس لئے کہ چین پہننا بلاد اسلام میں عورتوں کے ساتھ خاص ہے نہ کہ مردوں کیلئے، لہذا اس کو پہننا تشبہ بالنساء ہے اور اس کے ممانعت کے بارے میں احادیث وارد ہوئی ہیں بلکہ ایسا کرنے والے یعنی عورتوں سے مشابہت اختیار کرنے والے پر لعنت بھی کی گئی ہے۔ بخاری(۵۸۸۵) میں شعبہ عن قتادہ عن عکرمہ عن ابن عباس کے طریق سے مروی ہے کہ ابن عباسؓ کے فرمایا:((رسول اللہؐ نے مردوں میں سے عورتوں کی مشابہت اختیار کرنے والوں پرلعنت کی ہے اور عورتوں میں سے مردوں کی مشابہت اختیار کرنے والی عورتوں  پر لعنت کی ہے)) ۔ واللہ اعلم

متعلقہ موضوعات

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں