فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

متفرق فتاوى جات / علم کا طلب کرنا

علم کا طلب کرنا

تاریخ شائع کریں : 2017-03-02 | مناظر : 1228
FA
- Aa +

محترم جناب ! میں ایک ایسے ملک میں رہتا ہوں جہاں علماء سے براہ راست پڑھنا بہت مشکل ہے، تو اگر میں کیسٹ وغیرہ کے ذریعے سماع کر کے اسے اچھی طرح ذہن نشین کر لوں کیا یہ کافی ہو گا؟ برائے مہربانی میری رہنمائی فرمائیں، چونکہ ہمارے ہاں بعض ایسے جوان ہیں جو ہمارے ہاں قابل قدر علماء کو برا بھلا کہتے ہیں، اگر ہم انہیں کچھ سمجھائیں تو کہتے ہیں کہ حجاز کے علمائے جرح و تعدیل نے ان کے بارے میں خبردار کیا ہے اسی لئے ہم لوگوں کو ان سے خبردار کر رہے ہیں تو اس کا کیا حل ہے؟ اور کیا کوئی ایسی امکانی صورت ہے کہ سعودیہ کی یونیورسٹوں میں سے کسی میں داخلہ مل جائے؟ یا پھر وہاں کی شرائط زیادہ سخت ہیں؟

طلب العلم

حامداََومصلیاََ۔۔۔

امابعد۔۔۔

اللہ کیتوفیق سے ہم آپ کے سوال کے جواب میں کہتے ہیں کہ

میں آپ کو یہی نصیحت کروں گا کہ شریعت کا علم قرآن و سنت سے حاصل کرنے میں خوب محنت کریں اور اہل علم کے کلام سے استفادہ کریں،خاص طور پے وہ علماء جو سلف صالح کے علوم سے جڑے ہوے ہیں اور ان کی کتابوں کو تھامے ہوے ہیں، اور باالخصوص میں شیخ الاسلام ابن تیمیہ اور ان کے شاگرد ابن القیم کا ذکر ضرور کروں گا کیونکہ ان کی تألیفات خیر سے بھر پور ہیں۔ اور اس کے ساتھ ساتھ جو کچھ مشکل لگے اس کے بارے میں سؤال اور مشتبہ اشیاء کے بارے میں مشاورت کیلئے اہل علم سے رابطہ قائم رکھیں۔ اپنے وقت کی بھر پور حفاظت کریں یہی آپکا اصل سرمایا ہے، گروہ بندی سے خبردار ہیں خالص اللہ اس کے رسول اور اہل اسلام کے ساتھ رہیں، وہ امور جن میں بحث کا کوئی فائدہ نہیں اور وہ اشیاء جو آپ کی سمجھ سے بالا تر ہیں ان سب سے خوب بچیں۔ اللہ مجھے اور آپکو خیر اور نیک عمل کی توفیق نصیب فرمائے۔

آپ کا بھائی

خالد المصلح

11/11/1424هـ

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں