فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

متفرق فتاوى جات / مڈل سکول میں مختلط پڑھائی کا حکم

مڈل سکول میں مختلط پڑھائی کا حکم

تاریخ شائع کریں : 2017-03-21 | مناظر : 1142
- Aa +

ایک لڑکی کی عمر ۱۴ برس ہے، تو کیا اس کیلئے مڈل سکول میں مخلوط نظام تعلیم میں پڑھنا جائز ہے؟ اس بات کو ملحوظ رکھتے ہوئے کہ یہاں تمام ادارے مخلوط ہیں اور یہ بچی گاؤن اوڑھتی ہے اور بڑی دیندار ہے اور اس نے ابھی تک مڈل سکول میں ایک دن بھی نہیں پڑھا کیونکہ اس کو کہا گیا تھا کہ مڈل میں مخلوط نظام تعلیم کے تحت پڑھنا حرام ہے

حكم الدراسة في الثانوية المختلطة

حامداََ و مصلیاََ۔۔۔

اما بعد۔۔۔

اللہ کیتوفیق سے ہم آپ کے سوال کے جواب میں کہتے ہیں کہ

وہ ایسا سکول تلاش کریں جہاں اختلاط نہ ہو اور اگر نہ ملے تو یہ گھر میں ہی تعلیم کے طریقے پر پڑھے، اور یہ اسی لئے کہ اختلاط میں بہت زیادہ شر اور فساد کا اندیشہ ہے۔

آپ کا بھائی

خالد المصلح

22/11/1424هـ

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں