×
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو

خدا کی سلام، رحمت اور برکتیں.

پیارے اراکین! آج فتوے حاصل کرنے کے قورم مکمل ہو چکا ہے.

کل، خدا تعجب، 6 بجے، نئے فتوے موصول ہوں گے.

آپ فاٹاوا سیکشن تلاش کرسکتے ہیں جو آپ جواب دینا چاہتے ہیں یا براہ راست رابطہ کریں

شیخ ڈاکٹر خالد الاسلام پر اس نمبر پر 00966505147004

10 بجے سے 1 بجے

خدا آپ کو برکت دیتا ہے

فتاوی جات / روزه اور رمضان / حیض کا خون ایک دن کیلئے بند رہا اور عورت نے روزہ رکھ لیا

اس پیراگراف کا اشتراک کریں WhatsApp Messenger LinkedIn Facebook Twitter Pinterest AddThis

تاریخ شائع کریں:2017-04-08 12:20 PM | مناظر:1817
- Aa +

اس عورت کا کیا حکم ہے جس کا حیض کا خون ایک دن کیلئے بند رہا اور اس نے روزہ رکھ کیا پھر اگلے دن خون جاری ہو گیا؟

انقطع عنها الدم فصامت

جواب

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

بتوفیقِ الہٰی آپ کے سوال کا جواب درج ذیل ہے:

یہ دن جس میں حیض کا خون رک گیا تھا یہ بھی حیض کے ایام میں ہی شمار کیا جائے گا اسی وجہ سے یہ عورت اس دن کی قضاء بھی کرے گی اور اس پر نماز بھی واجب نہ ہو گی، کیونکہ خون کا دوبارہ جاری ہو جانا اس بات پو دلالت کر رہا ہے کہ ابھی حیض منقطع نہیں ہوا تھا۔ یہ معاملہ بہت سی عورتوں کے ساتھ پیش آتا ہے کہ ایک دن کیلئے خون رک جاتا ہے یا آدھے دن کیلئے اور بعض کے ساتھ تو یہ بھی ہوتا ہے کہ ڈیڈھ دن تک رکا رہتا ہے، مگر اس سے یہ عورت حیض کے ایام سے نہیں نکلتی اور یہی علماء کے ہاں راجح قول ہے۔


آپ چاہیں گے

ملاحظہ شدہ موضوعات

1.

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں