فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

روزه اور رمضان / رمضان میں دن کے قت خفیہ گناہ (مشت زنی) کرنا

رمضان میں دن کے قت خفیہ گناہ (مشت زنی) کرنا

تاریخ شائع کریں : 2017-04-20 | مناظر : 1175
- Aa +

مجھے خفیہ گناہ کی عادت لگی ہوئی ہے اور رمضان میں بھی دو مرتبہ کر بیٹھا اور مجھے اس بات کا علم بھی ہے کہ اس کی قضاء واجب ہے، میرا سؤال یہ ہے کہ کیا جو میں نے کیا ہے اس حدیث کے منافی ہے ((جس نے رمضان کے روزے ایمان اور احتساب کے ساتھ رکھے اس کے پچھلے تمام گناہ معاف کر دئے گئے)) مطلب یہ کہ کیا میرے لئے پورے مہینے کے روزوں کا اجر لکھا جائے گا یا میرا شمار ان لوگوں میں ہو گا جنہوں نے پورا مہینہ روزے رکھے ہی نہیں؟

ایک سؤال یہ بھی ہے کہ میں نے ان دنوں میں سے ایک کی قضاء کی نیت سے روزہ رکھا تھا اور میں سفر کر کے اپنے چچا کے ہاں گیا تو انہوں نے زبردستی مجھے دوپہر کا کھانا کھلایا اس وجہ سے کہ میں ان کا ہاں نہیں ٹھہروں گا اور بہت عرصہ بعد ملاقات ہو گی تو میں نے اس دن روزہ توڑ دیا جو کہ اصل میں فرض روزے کی قضاء کیلئے رکھا تھا تو اب میں کیا کروں؟ دو مرتبہ اسے قضاء کروں یا کچھ اور؟ اللہ آپ کو جزائے خیر دے، والسلام

العادة السرية في نهار رمضان

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

بتوفیقِ الہٰی آپ کے سوال کا جواب درج ذیل ہے:

اللہ سے دعا ہے کہ مجھے بھی معاف کرے اور آپ نے جو کیا اس پر آپکی توبہ بھی قبول فرمائے، رمضان میں جو آپ نے مشت زنی کی ہے اس سے آپ کا روزہ ٹوٹ گیا جس کی وجہ سے جو حدیث میں فضیلت آئی ہے وہ آپ حاصل نہیں کر سکے، آپ پر واجب ہے کہ زیادہ سے زیا دہ نیک اعمال کریں اور شہوت کو ابھارنے والے فتنوں سے جتنا ہو سکے دور رہیں، اور جو آپکا دوسرا سؤال ہے کے آپ نے قضاء والے دن روزہ توڑ دیا تو یہ جائز ہے کیونکہ واجب روزے بھی مرض یا سفر کی حالت میں توڑے جا سکتے ہیں، اب آپ کے ذمے ایک روزے کی قضاء ہے نہ کہ دو کی۔

آپ کا بھائی/

خالد المصلح

08/11/1424هـ

متعلقہ موضوعات

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں