فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

​زکوٰۃ / قربانی کے جانور خریدنے میں زکوٰۃ کامال خرچ کرنا

قربانی کے جانور خریدنے میں زکوٰۃ کامال خرچ کرنا

تاریخ شائع کریں : 2017-05-16 | مناظر : 1044
- Aa +

کیا کسی ایسے شخص کو زکوٰۃ کا مال دینا جائز ہے جس سے وہ اپنے لئے قربانی کا جانور خریدے؟

صرف الزكاة في شراء الأضحية

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

بتوفیقِ الہٰی آپ کے سوال کا جواب درج ذیل ہے:

زکوٰۃ کے مصارف کو اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں کچھ اس طرح بیان فرمایا ہے:  ’’بیشک صدقات صرف فقراء ، مساکین ، ان کو وصول کرنے والوں ، نئے اسلام لانے والوں کی دلجوئی ، غلامو ں ، قرضداروں ، اللہ کی راہ میں چلنے والوں اور اور راہ گیر مسافروں کے لئے ہے یہ اللہ کی طرف سے فرض ہے اور اللہ بہت علم والا بہت حکمت والا ہے‘‘۔ [التوبۃ: ۶۰] لہٰذا ان کے علاوہ کسی اور کو زکوٰۃ دینا درست نہیں ہے ، اور قربانی جمہور علماء کے نزدیک سنت اور بعض علماء کے نزدیک واجب ہے ، اوران دونوں اقوال کے علاوہ ایک اورقول مشروعیت کا ہے کہ جس کے ساتھ مال ہے اور وہ قربانی پر قادر ہے تو اس کے لئے مشروع ہے ، لہٰذا جو قربانی پر قادر نہیں ہے تو اس کو زکوٰۃ نہ دی جائے کہ اس سے وہ قربانی کرلے

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں