فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

​زکوٰۃ / تجارتی زمینوں میں زکوٰۃ کا حکم

تجارتی زمینوں میں زکوٰۃ کا حکم

تاریخ شائع کریں : 2017-05-19 | مناظر : 1056
- Aa +

ہم چند افراد نے مل کر ایک چھوٹی سی کمپنی بنا لی ، ہمارا کام یہ ہے کہ ہم اصل مال سے کچھ زمینیں خریدتے ہیں اور پھر ان کو قسطوں پر فروخت کرتے ہیں ، اور مال پر پورا سال کبھی بھی نہیں گزرتا ، بس جب بھی ہمارے پاس مال جمع ہوتا ہے تو ہم باہم کچھ زمینیں خرید لیتے ہیں ، اور اسی طرح ہمارا سلسلہ چلتا رہتا ہے ، اب اس صورت میں ہم اپنے اموال کی کس طرح زکوٰۃ نکالیں جب کہ ہماری صورتحال یہی ہے؟

زكاة المال في تجارة العقار

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

جب مال پر سال پورا گزرتا ہے تو پھر اس پر زکوٰۃ واجب ہوجاتی ہے ، چاہے وہ مال نقدی کی شکل میں ہو یا پھر زمین وغیرہ کی شکل میں ، اب آپ لوگوں کے پاس جو زمینیں ہیں ان کو دیکھ لیں کہ وہ زکوٰۃ کے دن کتنی مقدار کی برابر ہوتی ہیں، اگر وہ مثال کے طور پر چالیس ہزار کی بنتی ہوں تو پھر ان میں ایک ہزار ریال زکوٰۃ واجب ہوگی

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں