فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

حج و عمرہ / موالاۃ یعنی لگا تار سعی کرنے کا حکم

موالاۃ یعنی لگا تار سعی کرنے کا حکم

تاریخ شائع کریں : 2016-09-10 06:05 PM | مناظر : 1207
- Aa +

سوال

صفا مروہ کے درمیان سعی میں موالاۃ یعنی لگا تار سعی کرنے کے بارے میں شریعت کا کیا حکم ہے ؟

حكم الموالاة في السعي

جواب

 امابعد۔۔۔

سعی کے اشواط میں موالاۃ یعنی لگاتار سعی کرنے کے بارے میں اہلِ علم کے دو قول ہیں:-

پہلا قول:  احناف، شوافع اور حنابلہ کے ایک قول کے مطابق سعی کے دوران موالاۃ واجب نہیں ہے بلکہ سنت ہے ۔

دوسرا قول:  مالکیہ اور حنابلہ کے مذہب کے مطابق سعی کے دوران موالاۃ واجب ہے ۔

جو عدمِ وجوب کے قائل ہیں ان کی دلیل یہ ہے کہ وجوب پر کوئی دلیل ثابت نہیں ہے ۔۔۔اور جو وجوب کے قائل ہیں ان کی دلیل یہ ہے کہ وہ سعی کو طواف پر قیاس کرتے ہیں۔۔۔

میری رائے یہ ہے کہ عذر کے علاوہ موالاۃ واجب ہے ، کیونکہ اگر سعی میں فصل آ جائے تو اس سے ربط ٹو ٹ جاتا ہے اور وعبادت اجزاء میں بٹ کر غیر مرتبط ہو کر رہ جاتی ہے ۔ واللہ أعلم بالصواب۔

خالد المصلح

25/ 07 /1424هـ

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں