فتوا فارم کے لئے درخواست

غلط کیپچا
×

بھیجا اور جواب دیا جائے گا

×

افسوس، آپ فی دن ایک فتوی بھی نہیں بھیج سکتے.

حج و عمرہ / نائب حج کے لئے نفقہ

نائب حج کے لئے نفقہ

تاریخ شائع کریں : 2016-09-10 06:12 PM | مناظر : 1052
- Aa +

سوال

نائب حج کے لئے جو نفقہ لیتا ہے کیا اسے رزق کہا جائے گا ؟ حنابلہ اور ان کے علاوہ جو لوگ حج کے لئے رزق لینے کے جواز کے قائل ہیں کیا نفقہ اس معنی میں آئے گا ؟ اور اگر دونوں میں فرق ہے تو کیسا فرق ہے؟ کیاحج کے لئے رزق لینے کا جواز کتاب اللہ سے یا سنتِ رسول سﷺ سے ثابت ہے ؟

نفقة النائب في الحج

جواب

 امابعد۔۔۔

فقہائے احناف نے رزق کی یہ تعریف کی ہے کہ بیت المال سے کسی کے لئے بقدر حاجت و کفایت جو مال مقر کیا جاتاہے اسے رزق کہتے ہیں ، لہٰذا نائب ( جس کے بارے میں پوچھا گیا ہے) اگر وہ حکومت کا ملازم ہو اور وہ جو تنخواہ بیت المال سے لیتا ہے وہ رزق کہلائے گا ۔ جبکہ حج کے لئے رزق لینا حنابلہ کے نزدیک اس کو اپنی ذات کے لئے بطور ِ حج بیت المال سے رزق نہیں لینا چاہے ۔

اس لئے کہ یہ اس میں سے ہے جس کا نفع متعدی نہیں ہوتا اور بعض نے اس کے جواز کا کہا ہے۔ واللہ أعلم بالصواب۔

أ.د خالد المصلح

29/ 03/ 1425هـ

ملاحظہ شدہ موضوعات

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں